فیصل آباد: منہاج القرآن ویمن لیگ کی تربیتی ورکشاپ

مورخہ: 29 اگست 2017ء

منہاج القرآن ویمن لیگ کے زیراہتمام 29 اگست 2017 کو خواتین کی تربیتی ورکشاپ کا انعقاد کیا گیا۔ ورکشاپ میں تحریک منہاج القرآن کے مرکزی نائب ناظم اعلیٰ انجینئر محمد رفیق نجم نے خصوصی شرکت کی۔ تربیتی ورکشاپ میں منہاج القرآن ویمن لیگ ضلع فیصل آباد کی ناظمہ فرحت دلبرقادری، فریدہ علی، روبینہ خاکی، قمرالنساء علی اور تسنیم افضال سمیت سینکڑوں خواتین نے شرکت کی۔

ورکشاپ سے خطاب کرتے ہوئے انجینئر محمد رفیق نجم نے کہا ہے کہ احتساب کا پہیہ روکنے کیلئے سازشیں عروج پر ہیں۔ اس وقت حکومت نام کے کسی ادارے کا وجود نہیں ہے۔ قوم کی مائیں، بہنیں اور بیٹیاں شہدائے ماڈل ٹاؤن کے ساتھ کھڑی ہیں، آج بھی قاتل حکمرانوں کی سوچ بدنیتی پر مبنی ہے۔ جسٹس باقر نجفی کمشن کی رپورٹ کا انتظار ہے۔ انہوں نے کہا کہ خواتین کی شمولیت کے بغیر ترقی کا کوئی ہدف حاصل نہیں ہو گا۔ ملک کی آبادی کا نصف سے زائد حصہ خواتین پر مشتمل ہے۔ خواتین ملک کی معاشی ترقی میں انتہائی اہم کردار ادا کر سکتی ہیں مگر اس کیلئے بہترین اور موزوں پالیساں تشکیل دینا ہونگی۔ پالیسیاں بناتے وقت خواتین کی شمولیت کو یقینی بنانا ہو گا کیونکہ اس کے بغیر خواتین کی بہبود اور ترقی کی حامل پالیسیاں تشکیل دینا مشکل ہی نہیں نا ممکن ہے۔ انجینئر رفیق نجم نے کہا کہ خواتین کی تعلیم پر خصوصی توجہ دینا ہوگی کیونکہ یہ حقیقت ہے کہ تعلیم کے بغیر خواتین کی صلاحیتیں بےکار ہیں، خواتین کو تعلیم کی سہولتیں میسر ہونی چاہئیں تاکہ وہ زیادہ سے زیادہ تعلیم کے حصول کی طرف راغب ہوں اور ملکی تعمیر و ترقی میں معاون و مددگار ثابت ہوں۔ انہوں نے کہا کہ وزیر اعلیٰ پنجاب جو شہدائے ماڈل ٹاؤن کے قاتل ہیں انکی موجودگی میں کس طرح انصاف کے تقاضے پورے ہونگے۔ احتساب کا دائرہ وسیع ہونا چاہیے اگر چوروں، لٹیروں اور قاتلوں کو چھوڑا گیا توپاکستان کا وجود خطرے میں پڑ جائے گا۔انہوں نے کہا کہ ماڈل ٹاؤن کے قاتلوں سے انتقام قصاص کی صورت میں لیں گے۔ قاتل حکمرانوں سے خون کے قطرے قطرے کا حساب لیں گے، اب سانپوں کے سر کچلنے کا وقت آ گیا ہے، چور دروازے سے اقتدار میں آنے والے حکمرانوں کے دن گنے جا چکے ہیں۔ ایک اللہ کی گرفت میں آ چکا ہے دوسرا جلد اپنے انجام کو پہنچنے والا ہے۔

تبصرہ

Top