گھی اگر سیدھی انگلی سے نہ نکلے تو ہم ٹیڑھی انگلی سے گھی نکالنا جانتے ہیں: ساجد محمود بھٹی

پاکستان عوامی تحریک کے مرکزی آرگنائزر ساجد محمود بھٹی نے کہا ہے کہ نواز شریف اور شہباز شریف نے اپنے سیاسی مقاصد کیلئے ریاستی ادارے پولیس کو پرامن شہریوں کے خلاف بے دردی سے استعمال کیا۔ اب انہیں اس کی سزا بھگتنا ہو گا۔ دنیا کی کوئی طاقت اب انہیں ان کے عبرتناک ا نجام سے نہیں بچا سکتی۔ انہوں نے کہا کہ عوامی تحریک کے قائد ڈاکٹر طاہرالقادری نے سانحہ ماڈل ٹاؤن کی تحقیقات کیلئے پاناما طرز کی غیر جانبدار جے آئی ٹی بنانے کا مطالبہ کیا ہے، جس کی تمام جماعتوں کے قائدین نے حمایت کی ہے۔ جسٹس باقر نجفی کمیشن کی رپورٹ کی انگلیاں شہباز شریف اور رانا ثناء اللہ کی جانب اٹھ رہی ہیں، یہی وجہ ہے کہ حکومت پنجاب ساڑھے تین سال اس رپورٹ کو دبا کر بیٹھی تھی۔

وہ عوامی تحریک کے مرکزی رہنما ملک فخر زمان عاد کی جانب سے دئے گئے ظہرانے کے موقع پر گفتگو کررہے تھے۔ اس موقع پر ترجمان عوامی تحریک قاضی شفیق الرحمن، میڈیا کوآرڈینیٹر غلام علی خان، میر واعظ ترین اور ملک طاہر جاوید بھی ان کے ہمراہ تھے،

ساجد بھٹی نے کہا کہ جسٹس باقر نجفی کمیشن کی رپورٹ کے ذریعے چھپا ہوا سچ سامنے آچکا ہے۔ کارکنان اپنے قائد ڈاکٹر طاہرالقادری کے اشارے کے منتظر ہیں، انصاف کے حصول کے لئے کسی بھی وقت سڑکوں پر آسکتے ہیں، کنٹینر تیار ہے، حکمرانوں نے انصاف کی راہ میں رکاوٹ بن کرہمیں سڑکوں پر آنے کے لئے مجبور کیا گیا، کیونکہ اس ملک میں سڑکوں پر آئے بغیر انصاف نہیں ملتا، اپنا حق چھین کے لینا پڑتا ہے۔ گھی اگر سیدھی انگلی سے نہ نکلے تو ہم ٹیڑھی انگلی سے گھی نکالنا جانتے ہیں۔

عوامی تحریک نے آئین اور قانون کے دائرے میں رہتے ہوئے وزیراعلی، اور وزیرقانون پنجاب کے فوری استعفے کا مطالبہ کیا ہے، اگر استعفے نہ آئے توعوام کے دباؤ کے ذریعے قاتلوں کو دھکے دے کر اقتدار سے نکالا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ عوام کی پرامن طاقت سے قاتلوں، لٹیروں کو ہمیشہ کے لئے بھگا دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ قاتل برادران اپنے راستے کا سب سے بڑا بیریئر ڈاکٹر طاہرالقادری کو سمجھتے ہیں۔ 17 جون 2014 ء کا سانحہ بھی ڈاکٹر طاہرالقادری کو پاکستان آنے سے روکنے کیلئے کیا گیا تھا۔

تبصرہ

Top