اسلامی ریاستوں کے حکمرانوں کو چاہیے کہ وہ سیرت مصطفی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کو اپنے لئے آئیڈیل قرار دیں

آج امت مغرب کی پیروی کر کے بے سکونی کی زندگی بسر کر رہی ہے
آج امت مسلمہ اور پوری انسانیت کو محبت، احترام اور برداشت کے کلچر کی ضرورت ہے
منہاج القرآن یوتھ لیگ کے زیراہتمام سیمینار بعنوان ’’عالمی قیام امن،
سیرت الرسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی روشنی میں‘‘ سے مقررین کا خطاب

منہاج القرآن یوتھ لیگ کے زیراہتمام ایک پروقار سیمینار بعنوان ’’عالمی قیام امن، سیرت الرسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی روشنی میں‘‘ مرکزی سیکرٹریٹ تحریک منہاج القرآن ماڈل ٹاؤن کے دانش ہال میں منعقدہوا جسکی صدارت تحریک منہاج القرآن کے نائب ناظم اعلیٰ جی ا یم ملک نے کی۔ سیمینار میں متفقہ طور پر قرارداد منظور کی گئی جس میں مطالبہ کیا گیا کہ قیام امن کیلئے اس وقت دنیا میں سیرت مصطفی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم سے بڑھ کر اور کوئی دستور نہیں لہذا آج کے دور پرفتن میں پوری دنیا اور بالخصوص 56 اسلامی ریاستوں کے حکمرانوں کوچاہیے کہ وہ سیرت مصطفی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کو اپنے لئے آئیڈیل قرار دیں اورمغرب کی تقلید اور ان سے خوف کی روش کو ترک کر دیں۔

تحریک منہاج القرآن کے ناظم امور خارجہ راجہ جمیل اجمل نے سیمینار سے خصوصی خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آقا صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی ظاہری حیات میں انکی صحبت میں بیٹھنے والا غیر مسلم بھی رحمت سے محروم نہیں رہا تھا۔ آج آقا صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی ذات سے تعلق محبت کی مضبوطی اور ان کی تعلیمات پر عمل پیرا ہو کر زندگی کے ہر شعبے کیلئے رحمت و برکت حاصل کرنا ہو گی تاکہ پوری دنیا امن و سلامتی کا گہوارہ بن سکے۔

انہوں نے کہا کہ حضور صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی رحمت کے فیض کے باعث کائنات کا وجود قائم ہے۔ تحریک منہاج القرآن آقا صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی رحمت حاصل کرنے کا شعور بیدار کر رہی ہے۔ آج امت مسلمہ اور پوری انسانیت کو محبت، رحمت اور احترام کی ضرورت ہے۔ یہ مثبت رویے عام ہونگے تو دائمی امن و سلامتی حاصل ہو جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ جو حضور صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی ذات میں فنا ہو جاتا ہے وہ پیکر رحمت بن جاتا ہے اور اس کے گرد دن رات لوگوں کا ہجوم نظر آتا ہے۔

ضرورت اس امر کی ہے اپنی زندگیوں کو آقا صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے پیغام رحمت سے آراستہ کریں تاکہ امت مسلمہ کی کھوئی ہوئی عظمت لوٹ آئے اور پوری دنیا امن کا گہوارہ بن جائے۔

سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے راجہ جمیل اجمل نے کہا کہ آج امت مغرب کی پیروی کر کے بے سکونی کی زندگی بسر کر رہی ہے۔ مسجدیں محاذ جنگ بنا دی گئی ہیں، دین کا وقار لٹ گیا ہے اور مغرب کی اندھی تقلید شروع ہوگئی ہے۔ ایسا حضور صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم سے تعلق غلامی کے ٹوٹنے اور کمزور ہونے کے سبب ہے۔ مسلمان جن کی پیروی کر رہے ہیں ان کے انسانی حقوق کے فلسفے میں مسلمان انسان ہی نہیں ہیں۔ آج امن قائم کرنے کے نام پر بدترین دہشت گردی ہو رہی ہے۔

تحریک منہاج القرآن امت کو حضور صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی ذات سے تعلق مضبوط کرنے کیلئے متوجہ کر رہی ہے تاکہ مسلمانوں کی زندگیوں کا سکون اور خوشیاں لوٹ سکیں۔

نائب ناظم اعلیٰ تحریک منہاج القرآن جی ایم ملک نے کہاکہ معلم انسانیت آقائے دو جہاں صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی ذات سے تعلق قائم کرنے کا بہترین ذریعہ ان پر درودوسلام بھیجنا ہے۔ درود شریف کی اثر انگیزی یہ ہے کہ یہ فتنہ و فساد کا خاتمہ کر کے امن و سلامتی عطا کرتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ حضور صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے اخلاق، معاملات اور حسن سلوک کو اپنے لئے مشعل راہ بنائیں تو امت کی عظمت رفتہ بحال ہو گی۔ حضور صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم پوری انسانیت کیلئے رحمت ہیں انکے دیئے ہوئے اصولوں پر عمل کر کے ہی انسانیت امان حاصل کر سکتی ہے۔

سیمینار سے مرکزی صدر منہاج القرآن یوتھ لیگ چوہدری بابر علی، اشتیاق حنیف مغل، طیب ضیاء نے بھی خطاب کیا۔

تبصرہ

تلاش

ویڈیو

Ijazat Chains of Authority
We Want to CHANGE the Worst System of Pakistan
Top