موجودہ نظام انتخاب امانت، دیانت، سچی جمہوریت، عدل اور انصاف کادشمن ہے: انصار ملک

ڈاکٹر طاہرالقادری نے تحریک کی بنیاد ہی تبدیلی کے ایجنڈے پر رکھی۔
تبدیلی صرف نعروں سے نہیں بلکہ عملی جدوجہد سے آئے گی۔
موجودہ نظام انتخاب امانت، دیانت، سچی جمہوریت، عدل اور انصاف کادشمن ہے: انصارملک

اسلام آباد: پاکستان عوامی تحریک این اے 48 کے آرگنائزر انصارملک نے کہاہے کہ الیکشن کمیشن، سپریم کورٹ، نیب سمیت تمام اداروں کے سربراہوں نے اپنی نوکریاں بچانے کے لئے ڈیفالٹرز، جعلی ڈگری ہولڈرز اور لٹیروں کو کلیرنس سرٹیفیکیٹ جاری کر کے 18 کروڑ عوام کے ساتھ بہت بڑا دھوکہ کیا ہے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز 11 مئی کے دھرنے کی تیاریوں کے سلسلے میں عوام رابطہ مہم کے دوران مختلف مقامات پر کارنر میٹنگز کے موقع پر کیا۔

انہوں نے کہا کہ موجودہ نظام انتخاب امانت، دیانت، سچی جمہوریت، عدل وانصاف کا دشمن ہے، انہوں نے کہا کہ عوام 11 مئی کو پولنگ سٹیشنوں پر جانے کی بجائے عوامی تحریک کے دھرنوں میں شریک ہو کر ثابت کردیں گے کہ عوام نے اس ملک دشمن اورعوام کش نظام کو پاؤں کی ٹھوکر سے رد کر دیا ہے۔

انصار ملک نے کہا کہ اگراب بھی عوام نے اس نظام کو مسترد نہ کیا تو پھر آنے والے پانچ سال ایک بار پھر، دہشت گردی، لوڈ شیڈنگ، مہنگائی اور غربت کی چکی میں پسنے کے لئے تیار ہو جائے۔ انہوں نے اسلام آباد اور راولپنڈی کے عوام سے اپیل کی کہ 11 مئی کو بڑی تعداد میں دھرنے میں شامل ہوں۔ انہوں نے کہا کہ تبدیلی صرف نعروں سے نہیں بلکہ عملی جدوجہد سے آئے گی ڈاکٹر طاہرالقادری نے 1989 میں پاکستان عوامی تحریک کی بنیاد ہی تبدیلی کے ایجنڈے پر قائم کی تھی اور آج پوری قوم کی نظریں ڈاکٹر طاہرالقادری کی طرف ہیں وہ ہی اس ملک کے نظام کو تبدیل کرنے کی صلاحیت اور مکمل ایجنڈا رکھتے ہیں۔

تبصرہ

تلاش

ویڈیو

We Want to CHANGE the Worst System of Pakistan
Presentation MQI websites
Advertise Here
Top