نام نہاد جمہوریت سے پاکستان کی نظریاتی و جغرافیائی سرحدیں خطرات سے دوچار ہیں: ڈاکٹر طاہرالقادری

موجودہ نظام بوسیدہ ہوچکا، اس میں کسی بھی طبقہ کے حقوق کا تحفظ نہیں ہے
پاکستان عوامی تحریک اس ظالمانہ سیاسی نظام کے خاتمہ کیلئے پرامن جدوجہد کا آغاز کر چکی ہے
کرپٹ نظام اور مقتدر طبقے سے چھٹکارا حاصل کرنے کے لئے عملی جدوجہد کا وقت آ چکا ہے۔ ڈاکٹر طاہر القادری

پاکستان عوامی تحریک کے قائد ڈاکٹر محمد طاہر القادری نے کہا ہے کہ دہشت گردی، انتہا پسندی اور نام نہاد جمہوریت سے پاکستان کی نظریاتی و جغرافیائی سرحدیں خطرات سے دوچار ہیں۔ استحصالی اور کرپٹ سیاسی نظام نے عوام کو سخت مایوس کیا ہے، نظریہ پاکستان کی روح کو کمزور تر کر دیا گیا ہے۔ موجودہ نظام بوسیدہ ہوچکا، اس میں کسی بھی طبقہ کے حقوق کا تحفظ نہیں ہے۔ پاکستان عوامی تحریک پر اعتماد کرتے ہوئے عوام ایک کروڑ نمازیوں کی صف میں شامل ہو جائیں انشاء اللہ تبدیلی آ کر رہے گی۔ حکمران عوامی نہیں بلکہ اپنے مخصوص ایجنڈے کی تکمیل میں مصروف ہیں۔پاکستان عوامی تحریک اس ظالمانہ سیاسی نظام کے خاتمہ کے لئے پرامن جدوجہد کا آغاز کر چکی ہے، جسے ہر صورت پایہ تکمیل تک پہنچایا جائے گا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے پاکستان عوامی تحریک اسلام آباد کے عہدیداران سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر خرم نواز گنڈا پور، بشارت عزیز جسپال، سردار منصور، جی ایم نورانی اور عمر ریاض عباسی بھی موجود تھے۔ انہوں نے کہا کہ 18 کروڑ عوام مہنگائی، دہشت گردی، ناانصافی اور لاقانونیت کے عذاب کا شکار ہیں۔ عوام کو حقوق کی بحالی کے لئے پاکستان عوامی تحریک کا ساتھ دینا ہوگا۔ اب گھروں میں بیٹھے رہنے کا وقت نہیں، کرپٹ نظام اور مقتدر طبقے سے چھٹکارا حاصل کرنے کے لئے عملی جدوجہد کا وقت آ چکا ہے، ورنہ آنے والی نسلیں ہمیں کبھی معاف نہیں کریں گی۔ انہوں نے کہا کہ مزدوروں، ہاریوں، غریبوں اور پسے ہوئے 18 کروڑ عوام کو ان کے حقوق ضرور دلائیں گے۔ عوام تبدیلی کے لئے ان کا ساتھ دیں تو ملک کا مقدر بدل جائے گا۔

تبصرہ

تلاش

ویڈیو

We Want to CHANGE the Worst System of Pakistan
Presentation MQI websites
Advertise Here
Top