ویمن اینٹی ہراسمنٹ سیل قائم کرنے کا فیصلہ خوش آئند ہے: ڈاکٹر فرح ناز

مورخہ: 31 اگست 2021ء

تھانہ کی سطح پر شرفاء پر مشتمل کمیٹیاں بنائیں جو مظلوم خواتین کو انصاف دلوائیں
آئی جی پنجاب قوم کی ان بیٹیوں کو انصاف دلوانے کیلئے بھی اپنا کردار ادا کریں
خواتین اہلکاروں کو”وکٹم سپورٹ آفیسر“ کا نام دینا حوصلہ افزا ہے: مرکزی صدر منہاج ویمن لیگ


لاہور (31 اگست 2021) منہاج القرآن ویمن لیگ کی مرکزی صدر ڈاکٹر فرح ناز نے کہا ہے کہ ڈسٹرکٹ پولیس آفیسرز کی زیرنگرانی ویمن اینٹی ہراسمنٹ سیل قائم کرنے کا فیصلہ خوش آئند ہے۔ تاہم اوپر والے نیک نیتی کے ساتھ جو فیصلے کرتے ہیں نیچے والے ان فیصلوں کو رشوت ستانی، اقربا پروری اور نا اہلی کی وجہ سے سبوتاژ کر دیتے ہیں۔ اس سے پہلے بھی خواتین کو تحفظ دینے کیلئے درجنوں اقدامات کئے گئے مگر سب بے کار ثابت ہوئے۔ انہوں نے کہا کہ خواتین اہلکاروں کو ”وکٹم سپورٹ آفیسر“ کا نام دینا بھی حوصلہ افزا ہے مگر سوال عملدرآمد کا ہے۔

ڈاکٹر فرح ناز نے کہا کہ سانحہ ماڈل ٹاؤن کے حوالے سے انصاف کی عدم فراہمی کی وجہ سے ہمارے اس نظام پر شدید تحفظات ہیں اگر پولیس اہلکاران اور افسران ماضی کے حکمرانوں کے غیر قانونی احکامات ماننے سے انکار کر دیتے تو ہماری دو بہنوں شازیہ مرتضیٰ اور تنزیلہ امجد کی جان بچ سکتی تھی۔ آج بھی ناقص تفتیش کی وجہ سے قوم کی یہ بیٹیاں انصاف سے محروم ہیں۔ آئی جی پنجاب قوم کی ان بیٹیوں کو انصاف دلوانے کیلئے بھی اپنا کردار ادا کریں۔

انہوں نے کہا کہ خواتین کو تحفظ دینے کیلئے آئی جی پنجاب کی نیک نیتی پر شک نہیں مگر اس بات کی کیا گارنٹی ہے کہ تھانے کی سطح پر ایس ایچ او اور دیگر تفتیشی عملہ خواتین کے ساتھ ہونے والے ظلم پر انہیں انصاف دے گا اور کسی دباؤ کو قبول نہیں کرے گا۔ انہوں نے کہا کہ ہماری رائے ہے کہ آئی جی پنجاب تھانہ کی سطح پر شرفاء پر مشتمل کمیٹیاں بنائیں جو مظلوم خواتین کو انصاف دلوانے کیلئے ہر قسم کے سیاسی دباؤ کا راستہ روکیں اور قانون کی مدد کریں۔ سفارش اور اقربا پروری نے اس ملک سے انصاف کا جنازہ نکال دیا ہے۔

تبصرہ

تلاش

ویڈیو

We Want to CHANGE the Worst System of Pakistan
Presentation MQI websites
Advertise Here
Top