مسلمان خاتون کے لیے سیدہ کائنات حضرت فاطمہ رضی اللہ عنہا رول ماڈل ہیں : ارشاد اقبال

آج مسلمانوں کی پسماندگی اور زوال کی وجہ اپنی اسلامی اقدار و روایات سے روگردانی ہے
مسلمان عورت کے اسلامی اقدار و روایات کا امین بننے سے ہی حقیقی اسلامی معاشرہ معرض وجود میں آسکے گا
اسلامی سکالر ارشاد اقبال کا دروس عرفان القرآن کی نشست سے خطاب

منہاج القرآن ویمن لیگ واہگہ ٹاؤن لاہور کے زیراہتمام ایک مقامی شادی ہال (رحمت شادی ہال۔ آخری منٹ سٹاپ) میں خواتین کے 9 روزہ دروس عرفان القرآن کی تیسری نشست سے خطاب کرتے ہوئے اسلامی سکالر ارشاد اقبال نے کہا کہ آج مسلمانوں کی پسماندگی اور زوال کی وجہ اپنی اسلامی اقدار و روایات سے روگردانی ہے۔ آج ماؤں نے اپنے بچوں کی تربیت خود کرنے کی بجائے انہیں الیکٹرانک میڈیا کے سپرد کر دیا ہے جو عمومی طور پر اسلام دشمن ہاتھوں میں ہے اور جو اسلامی اقدار کا جنازہ نکال رہا ہے ۔ فحش اور غیر اسلامی چینلز اپنے پروگراموں کے ذریعے نئی مسلمان نسل کو اسلامی روایات اور اقدار سے بہکا کر غیر اسلامی اقدار و روایات کا رسیا بنا رہے ہیں جس کی وجہ سے نئی نسل اسلام سے عملاً دور ہوتی جا رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایک مسلمان خاتون کے لیے سیدہ کائنات حضرت فاطمہ رضی اللہ عنہا رول ماڈل ہیں مگر موجودہ دور میں اسلامی کلچر سے بے بہرہ مسلم خاتون فحاشی اور عریانی کا شکار ہو چکی ہے اور غیر اسلامی کلچر کو اپنانے کی وجہ سے آج مسلم اور غیر مسلم عورت میں تمیز کرنا مشکل ہو گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ضرورت اس امر کی ہے کہ آج مسلمان عورت خود کو اسلامی اقدار و روایات کی امین بنائے تبھی یہ معاشرہ ایک حقیقی اسلامی معاشرے میں تبدیل ہو سکے گا۔ انہوں نے مزید کہا کہ گھر کے سربراہ مرد کی بھی یہ ذمہ داری ہے کہ اپنی بہن، بیٹی، ماں یا بیوی کو اسلامی اقدار کا امین بنائے اور فیشن کے نام پر ہونے والی عریانی اور فحاشی کو اپنے گھر سے ختم کرے تا کہ آج کی عورت اسلامی اقدار و روایات کی پابندی کرنے والی بن سکے اور ہمارا یہ معاشرتی بگاڑ دور ہو سکے۔

تبصرہ

تلاش

ویڈیو

Ijazat Chains of Authority
We Want to CHANGE the Worst System of Pakistan
Top