طبقاتی نظام تعلیم کو ختم کرکے ہی معاشرے میں مساوات کے قیام کی بنیاد رکھی جاسکتی ہے: شاہد لطیف

غربت، افلاس، بے روزگاری، مہنگائی اور پسماندگی جہالت ہی کا شاخسانہ ہیں
اساتذہ کو معاشی طور پر آسودہ کرنا حکومت کی اولین ترجیحات میں شامل ہوناچاہیے
ڈائریکٹر منہاج ایجوکیشن سوسائٹی شاہد لطیف کی آزاد کشمیر سے آئے ہوئے اساتذہ کے ایک وفد سے ملاقات

وہی معلم معاشرے میں تبدیلی کا باعث بنتا ہے جو معاشی طور پر خوشحال ہے اس لیے اساتذہ کو معاشی طور پر آسودہ کرنا حکومت کی اولین ترجیحات میں شامل ہوناچاہیے۔ ان خیالات کا اظہار منہاج ایجوکیشن سوسائٹی کے ڈائریکٹر شاہد لطیف نے آزاد کشمیرسے آئے ہوئے اساتذہ کے ایک وفد سے مرکزی سیکرٹریٹ میں ملاقات میں گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ آج ایک سازش کے تحت دینی او ر دنیاوی علم میں تفریق پیدا کی گئی ہے اور اسی طرح قدیم اور جدید علوم کو الگ الگ کردیا گیا ہے۔ شیخ الاسلام ڈاکٹر محمد طاہرالقادری نے ملت کے اس مرض کی تشخیص کی اور اس کے زوال کے اسباب میں سے جہالت کو ایک بڑا سبب قرار دیا اور تنگ نظری، انتہا پسندی، فرقہ واریت کو اس کی علامات قرار دیا۔

انہوں نے اس بات پر بھی زور دیا کہ تعلیم کے ساتھ ساتھ طلبہ کی تربیت پر بھی توجہ دی جائے۔ شاہد لطیف نے تعلیمی نظام کی خرابیوں کی نشاندہی کرتے ہوئے کہا کہ ہمارا معاشرہ اس تبدیلی کا آغاز کرنے کے شعور سے کوسوں دور ہے اس کے لیے ذہن سازی کرنا ہر پاکستانی کا فرض ہے۔

انہوں نے کہا کہ منہاج ایجوکیشن سوسائٹی ڈاکٹر محمد طاہرالقادری کے اس خواب کو حقیقت دینے کے لیے کوشاں ہے کہ وہ اس قوم کو 100 علی گڑھ دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ غربت، افلاس، بے روز گاری، مہنگائی اور پسماندگی جہالت ہی کا شاخسانہ ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ تحریک منہاج القرآن نے منہاج ایجوکیشن سوسائٹی کے ذریعے جہالت کے اندھیروں کو دور کرنے اور علم کی روشنی پھیلانے میں مصروف عمل ہے۔ انہوں نے اس امر پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ آج معاشرہ استاد کو وہ حیثیت دینے سے قاصر ہے جس کا وہ حق دار ہے۔

تبصرہ

تلاش

ویڈیو

Minhaj TV
Quran Reading Pen
Presentation MQI websites
Advertise Here
Top