ن لیگ جنوبی پنجاب کو الگ صوبہ بنانے کے وعدے سے منحرف ہو گئی: ڈاکٹر رحیق عباسی

حکمرانوں کو دہشت گردی کے خلاف ہمارا آواز اٹھانا پسند نہیں، مرکزی صدر پی اے ٹی
اوکاڑہ میں کارکنوں پر تشدد ہوا، دوبارہ ایسا واقعہ ہوا تو آئی جی پنجاب ذمہ دار ہوں گے‎

لاہور (28 جنوری 2015) پاکستان عوامی تحریک کے مرکزی صدر ڈاکٹر رحیق احمد عباسی نے کہا ہے کہ حکمرانوں کو دہشت گردی کے خلاف عوامی تحریک کا آواز بلند کرنا پسند نہیں، پولیس صوبائی حکومت کی ’’جنرل ہدایات‘‘ پر ہمارے کارکنوں کو ہراساں کر رہی ہے اور ہمیں یہاں کام کرنے سے روک رہی ہے، اوکاڑہ میں ہمارے تنظیم سازی کیمپ پر دو تھانوں کی پولیس نے ملکر حملہ کیا اور کارکنوں کو تشدد کا نشانہ بنایا، دوبارہ اس طرح کی دہشت گردی ہوئی تو ذمہ دار آئی جی پنجاب ہونگے۔ ڈاکٹر رحیق احمد عباسی جنوبی پنجاب کے 7 روزہ دورے پر ہیں، گزشتہ روز وہ ڈی جی خان پہنچے تو وہاں ان کا مقامی عہدیداروں کی جانب سے پرتپاک استقبال کیا گیا۔ اس موقع پر شاکر مزاری، ریاض للیانی، سعید مصطفوی، راجہ ندیم اور دیگر بھی موجود تھے۔

انہوں نے ڈی جی خان میں ورکرز کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کہا  کہ جنوبی پنجاب کی محرومیوں کے ذمہ دار صرف اور صرف پنجاب کے موجودہ حکمران ہیں جن کے پاس لاہور کی میٹروبس، رنگ روڈ اور رائے ونڈ روڈ  کیلئے تو پیسے ہیں مگر ان کے پاس جنوبی پنجاب کے عوام کو صاف پانی، روزگار دینے کیلئے پیسے نہیں۔ انہوں نے اس موقع پر کارکنوں کو ڈاکٹر طاہرالقادری کا پیغام بھی پڑھ کر سنایا۔ پاکستان عوامی تحریک اقتدار میں آ کر تعمیر و ترقی کا آغاز جنوبی پنجاب سے کرے گی اور جنوبی پنجاب کے ساتھ زیادتیاں کرنے والے حکمرانوں کو کٹہرے میں کھڑا کریں گے اور عوام کی محرومیوں کا حساب لیں گے۔ ڈاکٹر رحیق عباسی نے کہا کہ ن لیگ نے 3 سال قبل پنجاب اسمبلی میں قرار داد پاس کر کے وعدہ کیا تھا کہ وہ جنوبی پنجاب کو الگ صوبہ بنائیں گے، اب تو مرکز میں بھی ن لیگ کی حکومت ہے وہ الگ صوبہ بنانے والا وعدہ پورا کیوں نہیں کر رہی؟

تبصرہ

تلاش

ویڈیو

Minhaj TV
Quran Reading Pen
We Want to CHANGE the Worst System of Pakistan
Presentation MQI websites
Advertise Here
Top