علما کرام کا فریضہ معاشرے میں مثبت اور تعمیری قدروں کا فروغ ہے، صاحبزادہ فیض الرحمن درانی

ڈاکٹر طاہرالقادری نے تنگ نظری اورانتہا پسندی کے خلاف دلیل کی طاقت سے فتح حاصل کی
مرکزی سیکرٹریٹ منہاج القرآن میں علماء کونسل کے اجلاس سے گفتگو

لاہور (18 جنوری 2016) تحریک منہاج القرآن کے مرکزی امیر صاحبزادہ فیض الرحمن درانی نے کہا ہے کہ ملک کو مسائل سے نکالنے کیلئے علماء کو کردار ادا کرنا ہو گا۔ نوجوان نسل کا مذہب پر اعتماد بحال کرنے کیلئے ضروری ہے کہ علمائے کرام قول و فعل کے تضاد کو ختم کریں۔ تحریک منہاج القرآن نے پوری دنیا میں علم کے کلچر کو عام کیا ہے اور دین اسلام کی حقیقی تعلیمات کے عالمگیر فروغ پر محنت کی ہے۔ ڈاکٹر محمد طاہرالقادری نے امت مسلمہ کے وکیل ہونے کا حق ادا کر دیا ہے، آج انکی فکر کو پوری دنیا میں اس لئے مقبولیت مل رہی ہے کہ انہوں نے امت مسلمہ کو متحد کرنے کیلئے انتہائی اہم کر دار ادا کیا ہے۔ تنگ نظری، انتہا پسندی اور دہشت گردی کے خلاف انہوں نے دلیل کی طاقت سے فتح حاصل کی ہے، ڈاکٹر طاہرالقادری کی فکر کو فروغ دینا علماء کی ذمہ داری ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے منہاج القرآن علماء کونسل کے اجلاس سے گفتگو کرتے ہوئے کیا، اس موقع پر علامہ امداد اللہ قادری، علامہ سید فرحت حسین شاہ، علامہ میرآصف اکبر، علامہ محمد حسین آزاد الازہری، علامہ غلام اصغر صدیقی، علامہ محمد عثمان سیالوی سمیت دیگر علماء موجود تھے۔

صاحبزادہ فیض الرحمن درانی نے کہاکہ علما کرام کا فریضہ معاشرے میں مثبت اور تعمیری قدروں کا فروغ ہے۔ مطالعہ اور تحقیق کے عمل سے اعلیٰ کردار جنم لیتا ہے، مگر معاشرے کی غلاب اکثریت نے اس سے منہ موڑ لیا ہے، جس سے تنگ نظری اور دہشت گردی جنم لے رہی ہے، انہوں نے کہاکہ ضرورت اس امر کی ہے کہ درس نظامی کے نصاب کو اپ ڈیٹ کیا جائے اور اسے معاشرے کے جدید رجحانات کے مطابق ڈھالا جائے۔ درس نظامی کے نصاب کو ترتیب دیتے ہوئے تقلید کے ساتھ اجتہادی سوچ کو بھی ملحوظ خاطر رکھا جائے۔ انہوں نے کہاکہ علماء ڈاکٹر طاہرالقادری کے فروغ امن نصاب کامطالعہ ضرور کریں۔ معاشرے میں تربیت کے عمل کو فروغ دینا بھی ضروری ہے، اس کیلئے منہاج القرآن علماء کونسل عرفان القرآن کورس اور آئیں دین سیکھیں کورس کو عام کرنے میں کردار ادا کرے۔

تبصرہ

تلاش

ویڈیو

Minhaj TV
Quran Reading Pen
We Want to CHANGE the Worst System of Pakistan
Presentation MQI websites
Advertise Here
Top