دہشتگردی کے پے در پے واقعات حکومت کی نااہلی ہیں، ڈاکٹر طاہرالقادری

حکومت ضرب عضب کا کریڈٹ ہائی جیک کرنے کی بجائے ایکشن پلان پر عمل کرے
حکمران دہشتگردی کے خاتمے میں سنجیدہ نہیں دہشتگردوں کے پروموٹر اور سپورٹر ہیں
پشاور میں دہشتگردی اور اموات پر دلی افسوس کا اظہار، مشاورتی کونسل کے اجلاس میں گفتگو

لاہور(19 جنوری 2016) سربراہ پاکستان عوامی تحریک ڈاکٹر طاہر القادری نے نئے سال کے آغاز پر دہشتگردی کے پے در پے واقعات پر گہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکمران آپریشن ضرب عضب کا کریڈٹ ہائی جیک کرنے پر توانائیاں خرچ کرنے کی بجائے قومی ایکشن پلان پر عمل کرتے تو دہشتگردی کو کنٹرول کیا جاسکتا تھا۔ انہوں نے کوئٹہ کے بعد پشاور میں دہشتگردی کے واقعہ کی شدید الفاظ میں مذمت کی اور بے گناہ شہریوں کی اموات پر دلی افسوس کا اظہار کرتے ہوئے زخمیوں کی جلد صحتیابی کیلئے دعا کی، ان خیالات کا اظہار انہوں نے مرکزی سیکرٹریٹ میں عوامی تحریک کی مشاورتی کونسل کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

ڈاکٹر طاہرالقادری نے اپنے بیان میں کہاکہ پہلے بھی کہا تھا کہ موجودہ حکمران دہشتگردی کے خاتمے میں سنجیدہ نہیں بلکہ دہشتگردوں کے پروموٹر اور سپورٹر ہیں۔ انہوں نے کہاکہ قومی ایکشن پلان کے حوالے سے ایک سال زبانی جمع خرچ میں گزارنے والے حکمرانوں کو عوام کے جان و مال اور ملکی بقا سے زیادہ اپنے اقتدار اور جان و مال کی فکر ہے۔ انہوں نے کہاکہ فوجی عدالتوں کے قیام کی مدت 2 سال مقرر کرنا بد نیتی پر مبنی اقدام تھا جیسے ہی فوجی عدالتوں کے فیصلوں میں تیزی آئی تو ان فیصلوں کے خلاف اپیلوں کا سلسلہ شروع ہو گیا۔ فوجی عدالتیں ہنگامی حالات میں قائم کی گئیں اگر انکے فیصلوں کو چیلنج کئے جانے کا سلسلہ جاری رہا تو بقیہ مدت اسی طرح گزر جائے گی اور پھر جس طرح سندھ میں رینجرز کو محدود کرنے کی بحث شروع ہوئی اسی طرح فوجی عدالتوں کو مزید کام کرنے دینے یا نہ دینے کی بحث کا آغاز ہو گا۔ انہوں نے کہاکہ حکمرانوں نے ملک اور عوام کو دہشتگردوں کے رحم و کرم پر چھوڑ رکھا ہے۔

تبصرہ

تلاش

ویڈیو

Minhaj TV
Quran Reading Pen
We Want to CHANGE the Worst System of Pakistan
Presentation MQI websites
Advertise Here
Top